کیا زمین کے مزید “2 خفیہ” چاند دریافت کرلیے گئے؟

کیا زمین کے مزید “2 خفیہ” چاند دریافت کرلیے گئے؟

زمین کے کتنے چاند ہیں؟ تو اس کا جواب تو ایک ہے مگر 6 نومبر کو مختلف میڈیا اداروں نے کھلبلی مچا دینے والی اسٹوری چلائی تھی جس میں عندیہ دیا گیا تھا کہ ہمارے چاند کے ‘ 2 خفیہ ساتھی’ اور ہیں۔جیسے نیشنل جیوگرافک کی ہیڈلائن تھی ‘زمین کے 2 اضافی اور خفیہ چاند’ یا ویدر چینیل کی سرخی تھی ‘ زمین کا ایک نہیں تین چاند ہیں’۔اس دریافت کی بنیاد یکم ستمبر کو رائل آسٹرونومیکل سوسائٹس کے ماہانہ جریدے میں شائع ایک مقالہ بنا۔

یہ مقالہ ہنگری کی ELTE Eötvös Loránd یونیورسٹی کے ماہرین نے لکھا تھا جس میں ان ڈسٹ کلاﺅڈ کی تصدیق کی گئی جنھیں 1961 میں پولش ماہر فلکیات کازیمیرز کورڈیلیوسکی نے دریافت کیا تھا۔یہ بادل زمین اور چاند کے درمیان ایل فور اور ایل فائیو نامی پوائنٹس میں واقع ہیں۔یہ وہ پوائنٹس ہیں جو زمین اور چاند کی کشش سے کو ان بادلوں کی سطح کو مستحکم رکھتے ہیں۔ان بادلوں کو کورڈیلیوسکی کلاﺅڈ کا نام دیا گیا، جن کے بارے میں کافی عرصے سے شبہات ہیں کہ سورج کی کشش ثقل کے اثرات سے ایل فور اور ایل فائیو پوائٹس خالی ہوچکے ہیں۔تو ان بادلوں کی موجودگی کی تصدیق واقعی بڑی خبر ہے مگر اس کا مطلب یہ نہیں ہم نے نئے چاند دریافت کرلیے ہیں۔ویسے تو چاند کے حجم کی حد پر کوئی متفقہ رائے نہیں، مگر چاند جیسے کسی خلائی جسم کے بارے میں عام رائے یہ ہے کہ ایسا خلائی جسم جو کہ کسی سیارے کے گرد چکر لگاتا ہے۔کورڈیلیوسکی کلاﺅڈ، خلا میں اپنی پوزیشن کے باعث زمین کے مدار کے گرد گھومتے ہیں ممگر ان کی پوزیشن ایسی جگہ پر ہے جہاں کشش ثقل مٹی کے ذرات کو نظام کے اندر اور باہر کرتی ہے۔یہی وجہ ہے کہ محققین نے ان بادلوں کو چاند کہنے کی بجائے pseudo سیٹلائیٹس کہا ہے۔ان کا کہنا تھا کہ ہم تصدیق کرتے ہیں کہ ہمارے چاند کے پڑوس میں واقعی یہ مٹی والے pseudo سیٹلائیٹس بھی زمین کے گرد چکر لگاتے ہیں، ان کلاﺅڈز کو تلاش کرنا انتہائی مشکل تھا ، حالانکہ وہ چاند کی طرح زمین کے قریب ہی ہیں مگر انہیں محققین نے اکثر نظرانداز کیا’۔ویسے تو رات کو آسمان پر 3 چاندوں کو جگمگاتے دیکھنے کا خیال کافی اچھا لگتا ہے مگر یہ مٹی کے بادل بہت زیادہ دھندلے ہیں اور یہی وجہ ہے کہ وہ طویل عرصے تک دریافت نہیں ہوسکے، تو یہ توقع نہیں کی جاسکتی کہ ہم آسمان پر چاند جیسے کسی خلائی جسم کو رات کو دیکھ سکیں گے۔تو زمین کا ایک ہی چاند ہے تین نہیں۔

About Pakistan Hamari Jaan
آج کل اعلیٰ اور معیاری ویب سائٹ انٹرنیٹ پر تلاش کرنا اب ایک مشکل کام بنتا جا رہا ہے اور پاکستان ہماری جان ایسی ویب سائٹ جو ہمارے کلچر٬ معاشرتی اقدار اور ہماری اپنی زبان اردو میں بھی معلومات اور تفریح کا ذریعہ بنے-

اخلاقی اور ذمہ دارانہ طرز عمل کے فلسفہ کو یقین دہانی کرانے کے بعد، سالوں میں پاکستان ہماری جان نے مستند نیوز اور غیر سیاسی موجودہ معاملات میں کوئی سیاسی تنازعہ یا پوشیدہ ایجنڈا نہیں لیا ہے. صحافی میں جدید ترین بنیادی ڈھانچے کے ساتھ ساتھ صحافیوں میں سے کچھ ناموں میں، پاکستان ہماری جان نے ملک بھر میں اور پاکستان کے اندر دونوں صحافیوں کا وسیع نیٹ ورک ہے.

خبروں اور حالات حاضرہ سے متعلق پاکستان کی سب سے زیادہ وزٹ کی جانے والی ویب سائٹ ہے۔ پاکستان ہماری جان (ڈاٹ کام) نے بہت جلد پاکستان بھر میں مقبولیت حاصل کی- ہماری ویب یقیناَ ہمارے تمام انٹرنیٹ یوزرز (internet users) بشمول ہمارے نوجوانوں٬ طلبہ٬ پروفیشنلز اور فیملی کے تمام افراد کے لیے انٹرنیٹ کی دنیا میں ایک اہم پیش رفت ثابت ہوگی 

انشاء الله

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Send this to a friend