شوگر کنٹرول کریں لیکن کیسے؟؟؟ جانیے اس خبر میں

شوگر کنٹرول کریں لیکن کیسے؟؟؟ جانیے اس خبر میں

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)دنیا بھر میں آج شوگر کے عالمی دن کے موقع پر ماہرین طبی کی جانب سے گلوئے کے پتے کھانے کی خاص تائید کی گئی ہے۔ شوگر ایک ایسی بیماری ہے جس میں انسولین کی کمی یا انسولین کے اثر میں خرابی سے خون میں شوگر کی زیادتی ہو جاتی ہے۔ ہمارے جسم میں موجود لبلبہ جسم میں شوگر پیدا کرتا ہے۔ایک رپورٹ کے مطابق پوری دنیا میں تقریباً 10 لاکھ افرادمیں روزانہ کی بنیاد پر شوگر کی تشخیص ہوتی ہے، یہ بھی کہا جارہا ہے کہ سال 2020 تک شوگر کا شمار تیسری بڑی بیماری میں کیے جانے کا امکان ہے۔

طبی ماہرین نے شوگر کو کنٹرول میں رکھنے کے لیے گلوئے کے پتوں کے استعمال کا مشورہ دیا ہے۔ گلوئے کے پتے کے بارے میں یہ کہا جاتا ہے کہ یہ ایک ایسا پتہ ہےجس کا استعمال انسان کو 80سال تک بیمار نہیں ہونےدیتا۔ یہ پودا تقریباً ہر علاقے میں پایا جاتا ہے، گلوئے ایک جڑی بوٹی ہے جس کی جڑ اور بیل جتنی مفید ہے اس کے پتے صحت کے لیےاس سے ہزار گنا زیادہ فائدہ مند ہیں۔گلوئے کے پتوں کو جادوئی جڑی بوٹی کہا جائے تو غلط نہ ہوگا کیونکہ یہ صرف شوگر کے مرض کا علاج نہیں بلکہ اس سمیت کینسر، موٹاپے، میٹابولزم، کولیسٹرول، دل کی مضبوطی، بلڈ پریشر اور جسم میں موجود خون کو صاف کرنے کی صلاحیت بھی رکھتے ہیں۔ گلوئے کے پتے شوگر کو کیسے کنٹرول میں رکھتے ہیں :*گلوئے کے پتے انسولین کی پیداوار کو بڑھاتے ہیں۔*یہ گلوکوز کی بڑھتی مقدار کو جلانے کی صلاحیت بھی رکھتے ہیں، جس سے خون میں شکر کی سطح کو کم کرنے میں مدد ملتی ہے۔*گلوئے کے پتوں میں شامل hypoglycaemic ایجنٹ کا کام شوگر کی سطح کو کنٹرول میں رکھنا ہے۔ اس کے علاوہ یہ خون میں شکر کی سطح اور لپڈ (lipids) کو کم کرنے میں مدد کرتا ہے۔*اس کے علاوہ یہ کھانے کو فوری ہضم کرتا ہے جو کہ شوگر ہونے کی ایک بہت بڑی وجہ ہے۔

 

Islamabad: Monitoring of glue leaves specialists have been given specialists on the day of Sugar Worldwide today. Sugar is a disease in which the risk of insulin or injection effects improves blood sugar. Lubricants present in our body produce sugar in the body. According to a report, approximately 10 lac people are diagnosed with sugar on a daily basis, it is also said that sugar is done in the third major illness by 2020. It’s possible to go.

Medical experts have advised the use of glue leaves to keep sugar in control. It is said about glue leaves that it is an example that human being can not get sick for 80 years. This plant is found in almost every area, the glue is a herbal, the root and the bell as useful as its leaves are more than 1,000 times beneficial for health. If your leaves are called a herbal herbal, it will not be wrong. Because it is not only the treatment of diabetes, but also includes cancer, obesity, metabolic-ism, cholesterol, heart strength, blood pressure, and ability to clean blood in the body. How the glue leaves contain Sugar: * Glue leaves increase the production of insulin. * They also have the ability to burn the glucose’s growing amount, which helps reduce the blood sugar levels. * * The hypoglycemic agent involved in glue leaves is to control the sugar level. Apart from this, it helps reduce blood sugar levels and lipids. * Apart from this, it quickly digest food which is a major cause of sugar.

About Pakistan Hamari Jaan
آج کل اعلیٰ اور معیاری ویب سائٹ انٹرنیٹ پر تلاش کرنا اب ایک مشکل کام بنتا جا رہا ہے اور پاکستان ہماری جان ایسی ویب سائٹ جو ہمارے کلچر٬ معاشرتی اقدار اور ہماری اپنی زبان اردو میں بھی معلومات اور تفریح کا ذریعہ بنے-

اخلاقی اور ذمہ دارانہ طرز عمل کے فلسفہ کو یقین دہانی کرانے کے بعد، سالوں میں پاکستان ہماری جان نے مستند نیوز اور غیر سیاسی موجودہ معاملات میں کوئی سیاسی تنازعہ یا پوشیدہ ایجنڈا نہیں لیا ہے. صحافی میں جدید ترین بنیادی ڈھانچے کے ساتھ ساتھ صحافیوں میں سے کچھ ناموں میں، پاکستان ہماری جان نے ملک بھر میں اور پاکستان کے اندر دونوں صحافیوں کا وسیع نیٹ ورک ہے.

خبروں اور حالات حاضرہ سے متعلق پاکستان کی سب سے زیادہ وزٹ کی جانے والی ویب سائٹ ہے۔ پاکستان ہماری جان (ڈاٹ کام) نے بہت جلد پاکستان بھر میں مقبولیت حاصل کی- ہماری ویب یقیناَ ہمارے تمام انٹرنیٹ یوزرز (internet users) بشمول ہمارے نوجوانوں٬ طلبہ٬ پروفیشنلز اور فیملی کے تمام افراد کے لیے انٹرنیٹ کی دنیا میں ایک اہم پیش رفت ثابت ہوگی – انشاء الله

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Send this to a friend